بال گرنا بند لمبے گھنے اور چمک دار بال

آج میں  دو گھر یلو چیزوں کے بارے میں بتاؤں گی  جو آپ کے بالوں کا جھڑنا کم کر سکتے ہیں اور آپ کے نئے بال اگا کر آپ کے ہئیر گرو تھ کو ڈبل کر سکتے ہیں آج کے نسخے کو استعمال کرنے کے بعد آپ کو بالوں کے بارے میں کبھی کوئی شکا یت نہیں رہے گی یہ آپ کے بالوں کے تمام مسائل کو حل کر دے گا آپ کے بال تیزی سے لمبے ہوں گے گرنا بند ہو جائیں گے اور گنجے پن پر بھی دوبارہ سے بال آجائیں گے اتنا زبردست نسخہ ہے یہ  اس کا بالکل بھی کوئی نقصان نہیں ہے  اس  سے پہلے ہم اپنی ریمیڈی کی طرف بڑھیں اس سے پہلے میں آپ سے ایک گزارش کر نا چاہتی ہوں کہ میری ان باتوں کو اس ریمیڈی کے متعلق تمام باتوں کوغور سے سنیے گا تا کہ اس ریمیڈی پر آپ لوگ عمل کر سکیں۔ اس کو بنانے کے لیے سب سے پہلے آپ کو لینا ہے۔

ہرا دھنیاں ہرا دھنیاں ہر گھر میں موجود ہوتا ہے اور ہم اسے گھر کے کھانوں میں بہت شوق سے استعمال کر تے  ہیں اس کے فوائد بہت زیادہ ہیں ہرا دھنیاں ہمارے بالوں کے لیے بہت ہی زیادہ مفید ہے۔  اس میں اجزاء پائے جاتے ہیں جو ہمارے بالوں کی گروتھ کے لیے بہت مفید ہیں اس کے استعمال سے بال گرنا بند ہو جاتے ہیں ۔ دھنیاں  گنج پن کا ختم کر  کے نئے بال اگانے میں بہت ہی زیادہ صحت مند ہے بہت ہی زیادہ فائدہ مند ہیں۔  دوسری چیز جو ہمارے پاس ہے وہ ہے پیاز  پیاز کا رس  بھی بالوں کو لمبا کرنے کے لیے نہا یت ہی مفید ہے۔

یہ سر کی خشکی دور کر تا ہے اور اس کے اجزاء کی بدولت  سر کی سطح کا کھر درا پن   دور کر کے خون کی روانی کو بہتر بنانے میں مدد فر اہم کرتا ہے  پیاز میں اجزاء بہت ہی زیادہ ہوتے ہیں جو سر پر لگانے سے دورانِ خون کو بہتر بناتا ہے  بال بہت ہی اچھے بن جاتے ہیں بال گرنے سے رک جاتے ہیں بلکہ گرے ہوئے بال واپس لانے میں بھی مدد کرتے ہیں ان دونوں چیزوں کا جوس چاہیے ۔ دھنیاں کو اور پیاز کو گرینڈ کر لیں  اب اس مکسچر کو ایک چھوٹی سی پیالی میں ڈال دیں۔ اس میں ہم ملا ئیں گے ناریل کا تیل دو چمچ۔ ناریل کا تیل بھی ہمارے بالوں کے لیے بہت مفید ہے۔ بالوں کو لمبا گھنا مضبوط بنا تا ہے اور پتلے بالوں کو موٹا بناتا ہے آخر میں اس میں ارنڈی کا تیل  شامل کر یں گے یہ گنجے پن کے لیے بہت مفید ہے نئے بال جلدی اگتے ہیں اور ان  کی پیداوار بہت ہی زیادہ تیزی سے ہوتے ہیں اور انسان کو گنج پن دور ہو جاتا ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *