جامنی رنگ کا یہ چھوٹا سا مزیدار پھل فالسہ

اللہ کریم نے اپنی مخلوق کو خوراک مہیا کرنے کےلیے بے شمار نعمتوں سے سرفراز فرمایا ہے روزمرہ خوراک کے ساتھ ساتھ اللہ تعالیٰ نے انسانیت کو خوش رنگ اور خوش ذائقہ اور فرحت بخش پھلوں کے عظیم تحفوں سے بھی نوازا ہے ۔

فالسہ خداوندی میں سے ایک بہترین تحفہ ہے۔ جو خوش نماہونے کے ساتھ ساتھ خوش ذائقہ بھی ہے۔ اور یہ ہمیں موسم گرماکی شدت سے  محفوظ رکھتا ہے۔ گرمی سے پریشان ہونے کے بجائے ہمیں ان سے بچاؤ کے لیے تدابیر یں اختیارکرنی چاہیں ۔ فالسہ کے غذائی اجزاء اینٹی آکسیڈینٹ اجزاء کے حامل ہوتے ہیں۔ فالسہ  میں پوٹاشیم کی اعلیٰ مقدار ، تھوڑی مقدار میں سوڈیم ، وٹامن سی، کیلشیم ، فاسفورس اور فائبرز جیسے اہم غذائی اجزاء موجود ہوتے ہیں۔

فالسہ نہ صرف موسم گرما میں ٹھنڈک کے اثر کے لیے استعما ل کیا جاتا ہے بلکہ اس کے ساتھ ساتھ صحت کےلیے بھی بے حد مفید ہے۔ اس کا رنگ سرخ سیاہی مائل ہوتا ہے۔ اور ذائقہ ترش نسبتاً میٹھا ہوتا ہے۔ فالسہ مقوی دل ،جگر، اختراج قلب، قے اور ہچگی کے لیے مفید ہے۔ ہمارے لیے قدرت نے اس میں وٹامنز کا بے بہا خزانہ چھپا رکھا ہے اس کو شوگر کے مریض بھی استعمال کرسکتے ہیں۔ فالسہ کی کاشت ستمبر ، اکتوبراور فروری  اور مارچ میں ہوتی ہے۔

اس کے پتوں کا رنگ سبز اور پھولوں کا رنگ زرد ہوتا ہے ۔ اس  کے پتے دیکھنے میں دل کی شکل کے ہوتے ہیں۔ جن کی لمبائی بیس سینٹی میٹر اور چوڑائی سولہ اعشاریہ  پچیس سینٹی میٹر ہوتی ہے۔ ان پر موسم بہار میں چھوٹے چھوٹے پیلے رنگ کے پھول نکلتے ہیں۔ جن کی پتیوں کی لمبائی دو ملی  میٹر ہوتی ہے۔ پھل گو ل ہوتا ہے۔جس  میں پانچ ملی میٹر چوڑا بیج پایاجاتا ہے فالسہ کا درخت چار سے آٹھ  میٹر تک اونچائی والا ایک چھوٹا درخت ہوتا ہے۔
فالسہ کی لکڑی سے ٹوکریا ں بنتی ہیں۔ اور آرائشی سامان بھی تیار ہوتا ہے۔ ا س کے علاوہ اس کی آرائشی باڑ بھی لگائی جاتی ہے۔ اس کے پتوں سے بیڑی بھی بنائی جاتی  ہے۔ فالسہ کا مربہ بھی بنایا جاتا ہے اس کے شربت اور سردائی کے استعمال سے پیاس کی شدت کم ہوجاتی ہے۔ رسول اللہﷺ جب روزہ رکھتے تھے تو اپنے سر پر پانی ڈالتے تھے روزہ رکھیں جب شدید گرمی محسو س ہو تو نہا لیا کریں۔ اس کے بھی کتنے فائدے ہیں۔

پہلے تو فائدہ یہ ہے کہ فرض روزہ ادا ہوجائےگا۔ دوسرا نہاکر ٹھنڈک حاصل ہوجائے گی۔ تیسرا نہانےسے صفائی حاصل ہو جائے گی۔ اور چوتھا گرمی کے روزے میں ٹھنڈک حاصل کرنے کےلیے نہانےسے آقاﷺ کی ایک سنت بھی پوری ہوجائے گی۔ فالسہ کے استعمال سے ٹھنڈک اور فرحت کا احساس ہوتا ہے ۔ فالسہ کا شربت اور سردائی پیشاب آور ہیں۔ توانائی فراہم کرتا ہے اورجسم میں پانی کی کمی پوری کرتا ہے ۔

جسم کے فاسد مادوں کااخراج کرتا ہے گرمیوں کے موسم میں فالسہ بہت بڑی قدرتی نعمت ہے فالسہ صر ف لذیذ  ہی  نہیں ہوتابلکہ اس کے بے شمار طبی اور غذائی فوائد بھی ہیں ۔ فالسہ کا شربت بلڈ پریشر اور سردرد میں بھی فائدہ مند ہے۔ شدید گرمی اور لو میں فالسے کا شربت  سن سٹروک سے محفوظ رکھتا ہے موسم گرما کا پھل فالسہ بڑے شوق سے کھایا جاتا ہے اس میں اکیاسی فیصد پانی کےعلاوہ پروٹین اور نشاستہ بھی موجود ہوتا ہے۔ تحقیق کے مطابق فالسہ جگر کے امراض میں فائدہ مند ہے۔ اور یرقان کے مریضوں کےلیے بھی مفید ہے۔ فالسہ معدہ ، جگر اور دل کو طاقت دیتا ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

bullet force multiplayer unblocked shell shockers unblocked