جرمن ڈاکٹر نے بتایا لسی کا وہ نسخہ جس نے ایک پاکستانی کی دنیا ہی بدل دی

ایک ہمارے دوست جو بہت امیر کبیر تھے ۔ ان  کا ہاضمہ بگڑگیا۔ اور کئی سال تک معدے کے معالجین کے علاج سے بھی ٹھیک نہ ہوا۔ تو کسی نے مشورہ دیا کہ آپ لندن جا کر کسی معدے کے امراض کے ماہر سے مشورہ کریں۔ وہ صاحب لند ن تشریف لے گئے۔ وہ معدے کے اعلی ٰ سے اعلیٰ ڈاکٹر سے علاج کروایا۔ مگر صحتیابی نہیں ہوئی۔ لندن قیام کے دوران انہیں کسی دوست نے مشورہ دیا  کہ  جرمنی میں ایک نظام ہضم  کے ایک ماہر ڈاکٹر ہیں۔ آپ انہیں بھی آزما لیں۔ چنانچہ وہ جرمنی پہنچ گئے۔ جس شہر میں وہ جرمن ماہر رہتا تھا۔ وہاں پہنچ کر معلوم ہوا کہ ڈاکٹر صاحب بہت ضعیف ہوچکے ہیں۔ اب انہوں نے پریکٹس چھوڑ دی ہے۔ مگر گاہے بگاہے ایکا دکا کیس لے لیتےہیں۔ انہوں نے ڈاکٹرصاحب سے ملنے کی درخواست کی۔ آخر کارڈاکٹر صاحب نے بلا لیا۔

جب وہ ڈاکٹر صاحب کےگھر پہنچے۔ تو انہیں اپنے معدے کی بیماری کا احوال سنایا۔ اور کہا کہ میں خاص طو ر پر پاکستان سے  علاج کے لیے یہاں آیا ہوں۔ یہ بات سنتے ہی  جر من ڈاکٹر جو پہلے انتہائی خاموش اور توجہ سے مریض کا احوال سن رہے تھے۔ یکا یک آگ بگولہ ہوگئے اور غصے سے کانپنے لگ گئے ۔ اور کہا  یہاں سے فوراً  نکل جاؤ۔ مریض کو جرمن ڈاکٹر کے ا س رویہ سے کافی حیرانگی ہوئی ۔ آخر کافی منت سماجت کے بعد جرمن ڈاکٹر نے بتایا کہ بہت سال پہلے میں ہندوستان اور پاکستان گیا تھا۔ اور وہاں سے ہاضمے کی بیماریوں کاعلاج وہاں  کے طبیب حضرات سے سیکھ کر آیا تھا۔ لگتا ہے کہ آپ نے وہاں کسی اچھے طبیب سے علاج نہیں کرایا۔ اور اتنی دور چلے آئے۔ آپ اپنے ملک واپس چلیں جائیں۔اور وہاں پر کسی ماہر طب کو دکھائیں ۔

مریض نے ڈاکٹر سے کہا کہ اب اگر میں جرمنی آگیا ہوں۔ اور آپ سے ملاقات بھی ہوگئی ہے۔ توآپ میرا علاج بھی تجویز فرما دیں۔ آخر کار ڈاکٹر مان گیا۔ اس نے کہا کہ کل صبح دس بجے آنا۔ اگلے دن جب وہ جرمن ڈاکٹر کے گھر پہنچے۔ تو ڈاکٹر نے ایک صراحی  میں سفید رنگ کی مائع گلاس میں ڈال کر دی۔ اس میں دو چھوٹی شیشیوں میں سے  سیاہ اور سفید رنگ کا پاؤڈر ملایا۔ اور کہا کہ یہ تمہارا علاج ہے۔ یہ سفید رنگ کی جو مائع ہے یہ لسی ہے۔ اور پسا ہوا سیاہ رنگ کا پاؤڈر کالی مرچ اور سفید رنگ کا پاؤڈرنمک  ہے۔ تم لسی میں کالی مرچ اور نمک ملا کر پیا کرو۔ صحتیاب ہوجاؤ گے ۔ معدے کے وہ مریض واپس پاکستا ن آگئے۔

اورمشکل دو تین ماہ خالص دہی کی لسی کے ساتھ نمک اور کالی مرچ کے استعمال سے اللہ کے فضل سے صحتیاب ہوگئے۔ لسی ہاضمے کے امراض کےلیے سو دواؤں کی ایک دو ا ہے۔ لیکن اس میں  کالی مرچ اور تھوڑا سا نمک ملا ہونا چاہیے۔ یعنی کالی مرچ اور نمک اس کے لازمی جزو ہیں۔ میٹھی اور برف والی لسی بھی مفید ہے۔  لیکن اس میں وہ فوائدنہیں جو نمکین لسی میں کالی مرچ کی وجہ سے حاصل ہوتے ہیں۔ ایسے افراد جن کو پرانی پیچیش کی شکایت ہو اور وہ علاج کرواکر تنگ آچکے ہوں۔ انہیں چاہیے کہ ایک  گلاس تازہ لسی میں چٹکی بھر سیاہ مرچ اور چٹکی بھر نمک ڈال کر کچھ دن استعمال کریں۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.