رتن جوت کے فوائد کن کن بیماریوں میں استعمال ہوتی ہے

آج کی ہماری جڑی بوٹی کو بہت کم لوگ جانتے ہیں اس کے بہت سے فوائد ہیں ۔ آج جس جڑی بوٹی کے فوائد کے بارے میں ہم آپ کو بتانے جارہے ہیں وہ بہت خاص ہے ۔ اس جڑی بوٹی کو مکھن بوٹی بھی کہتے ہیں ۔ آج ہم آپ کو رتن جوت کی پہچان کے بارے میں اور استعمال کے بارے اور اس کے فوائد کے بارے میں بتائیں گے ۔

اگر ہم رتن جوت کی پہچان کے بارے میں بات کریں تو یہ جڑی بوٹی پتھریلی اور خشک زمینوں میں جہاں ایک ایک فٹ کے پودے ہوتے ہیں وہاں پر کثیر تعداد میں پائی جاتی ہے ۔ اس کی شاخیں سرخ رنگ کی ہوتی ہیں۔ یہ پنجاب کے مختلف علاقوں میں پائی جاتی ہے۔ پنجاب کے زیادہ تر لوگ اسے مکھن بوٹی کے نام سے جانتے ہیں۔اگر بوٹی کو اکھاڑ کر سائے میں رکھ دیا جائے تو دیکھیں گے کہ یہ کئی ماہ تک تروتازہ رہے گی ۔ اگر رتن جوت کے مزاج کے بارے میں بات کریں تو اس کا مزاج سرد تر درجہ اول ہوتا ہے اگر رتن جوت کے استعمال کی بات کریں تو اس کو خ و ن صاف کرنے کیلئے بہت فائدہ مند سمجھا جاتا ہےاس سے مختلف شربت بھی بنا کر استعمال کیے جاتے ہیں۔ زیادہ تر لوگ اسے بطور سردائی بھی استعمال کرتے ہیں ۔ اس کے علاوہ پیشاب کی جلن اور گردے اور مثانے کی پتھری کیلئے بھی اس کا استعمال بہت مفید سمجھا جاتا ہے ۔

اگر گرمی کیوجہ سے جریان یا ا ح تلام کامسئلہ ہوتو اس کا استعمال بہت زیادہ فائدہ مند مانا جاتا ہے ۔ اس کے علاوہ ہاتھوں اور پاؤں کی جلن کے لیے اس کا استعمال کیا جاتا ہے ۔ لو کا لگ جانا اور گرمی کے تمام مسائل میں رتن جوت کا استعمال بلکل خصوص کیا جاتا ہے ۔ اگر ہم رتن جوت کی مقدار خوراک کی بات کریں تو تازہ بوٹی آپ چھ سے ایک تولہ تک استعمال کرسکتے ہیں۔ یہ تھی رتن جوت کے بارے میں کچھ معلومات جو ہم نے آپ کو بتائی ہے۔آپ اس جڑی بوٹی کو اپنی روزمرہ زندگی کے مسائل میں استعمال کرسکتے ہیں اور قدرت کے اس شاہکار سے فائدے اٹھا سکتے ہیں ۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

bullet force multiplayer unblocked shell shockers unblocked