صرف تین راتیں سونے سے پہلے پپیتہ کھائیں

صحت اور خوبصورتی سے متعلق لا جواب   فوائد لے کر آیا ہے یہ پپیتہ۔ اس پپیتے کے بہت ہی زیادہ فوائد ہیں اگر آپ ان فوائد کو جان لیں تو آپ حیران ہو جائیں گے ۔ جیسا کہ ہم سب ہی جانتے ہیں اور اس بات کو سمجھتے بھی ہیں کہ ہر کسی کو ایک صحت مند زندگی  کی ضرورت ہے آج ایک ایسے  پھل کو متعارف کر وا رہے ہیں جو کہ بیماریوں کا بہت ہی موثر ترین علاج ہے اللہ کی بہت ہی بڑی نعمت ہے جس طرح سے ہم سب ہی جانتے ہیں کہ  ہمیں زندگی کی کتنی ایک ضرورت ہے کہتے ہیں نا کہ  ایک صحت مند زندگی ہی کسی کام کی ہوتی ہے بیماری زندگی کا کیا فائدہ بیماری زندگی سے بہتر ہے۔

کہ انسان کو مر ہی جا نا چاہیے تو آج   کا موضوع ایک پھل کے بارے میں  ہے جو کہ بہت ہی خاص ہے بہت ہی لذیز ہے اور اس کے بے شمار فوائد ہیں اتنے فوائد ہیں کہ آ پ جان کر حیران رہ جائیں گے یہ اللہ پاک کی بہت ہی خوبصورت نعمت ہے جس کو کھا کر  ہم اپنی صحت کو بھی بہت ہی زیادہ اچھا  بنا سکتے ہیں۔ آزمودہ بھی ہے اللہ کی بہت بڑی نعمت ہے وٹامن اے بی اور سی کا خزانہ ہے حیران کن اس کے اثرات انسانی جسم میں کسی طرح کام کر تے ہیں اس کا رنگ سبز و سرخ ہوتا ہے اس کا مزاج سرد تر ہوتا ہے اس کا ذائقہ کچے کی  صورت میں تلخ اور پختہ کی صورت میں شیریں کی طرح ہوتا ہے اس کے بہت ہی زیادہ فوائد ہیں۔

جن کو جان کر آپ بہت ہی زیادہ حیران ہو جائیں گے اس کے حسبِ ذیل فائدے ہیں اس کی خوراک ایک پاؤ سے آدھا پاؤ ہوتی ہے پکے ہوئے پپیتے میں وٹامن اے بی اور سی پائے جاتے ہیں ۔ یہ ہضم ہوتا ہے اور بھوک لگا تا ہے گردے کی پتھری کو توڑتا ہے کچے پھل کے دودھ کو داغ پر لگا نا بہت مفید ہوتا ہے کسی بچھو کے کاٹنے پر بھی یہ دودھ لگا نا بہت مفید ہے۔ پیٹ کے کیڑے نکالنے کے لیے پختہ پھل کے ہمراہ شہد کا کھلانا بھی بہت مفید ہے  اگر رات کو سوتے وقت کھا یا جائے او ر تین روز تک یہ عمل جا ری رکھا جائے  تو یقینی طور پر اس کا فائدہ ہوگا۔

اس کے پتوں دل معدہ اور سوزش کے لیے بہت مفید ہے منہ سے خون آنے کے لیے بھی بہت موثر ہے  گرمی میں بواسیر کے لیے بھی  بہت مفید ثابت ہوتا ہے۔  اس کے چھلکے محفوظ کر لیا جائے تو گوشت گلا نے کے لیے حسبِ ضرورت ہنڈیاں میں ڈال کر فائدہ اٹھا یا جا سکتا ہے۔ جو حسبِ ضرورت استعمال کی جا سکتی ہے۔ کمزور معدہ والے افراد کے لیے اس کا استعمال بہت ہی زیادہ بہتر ہے۔  پپیتے کے بہت ہی زیادہ فوائد ہیں اس کو استعمال کر نا چاہیے۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *