کہیں بھی مل جائے یہ پھل تو چھوڑنا مت جادوئی فائدے ہیں اسکے کمزور آدمی بھی طاقتور ہوجاتا ہے

بظاہر یہ جلے ہوئے کوئلے کی شکل میں بازار میں نظر آتے ہیں لیکن ان کے اندر سفید گری ہوتی ہے یہ گری ہی کھائی جاتی ہے

یہ پھل یا سوغات سارا سال دستیاب ہوتی ہے ۔ مگر سردیوں میں اسے زیادہ کھایا جاتا ہے ۔جن لوگوں کا مزاج گرم ہو اور ہاتھ پاؤں میں جلن محسوس کرتے ہیں جن کے جسم پر عام طور پر پھوڑے اور پھنسیاں نکلتی ہوں جنہیں منہ پکنے کی تکلیف ہوجاتی ہے ایسے لوگوں کو کھانا کھانے کے دو گھنٹے کے بعدکچے سنگھارے کھانے چاہئیں ۔یا روزانہ چند دنوں تک سنگھارے کامربع کھائیں۔آج کل نوجوان لڑکے چٹے پٹے بازاری کھانے اور بھنا ہوا گوشت بہت کھاتے ہیں اس سے ان کا معدہ خراب ہوتا ہے

اورجسم میں گرمی بھی بڑھ جاتی ہے پھر وہ جعلی حکیموں کے پاس جاکر علاج کرواتے ہیں جس سے اور نقصان ہوتا ہے ۔ جسمانی کمزوری بڑھتی جاتی ہے طاقت بلکل نہیں رہتی تھکن کا شکار رہتے ہیں کام کاج کرنے اور پڑھنے لکھنے میں دل نہیں لگتا بدن کو کھوکھلے کردینے والے مادے صحت کو زنگ لگادیتے ہیں چڑچڑاپن بڑھ جاتا ہے نکاحت کسی کام کا نہیں چھوڑتی ۔ دماغی کمزوری کام نہیں کرنے دیتی ۔ ان تمام خرابیوں کو دور کرنے کیلئے سنگھاڑا نعمت ہے ۔ چند دانے ابلے ہوئے سنگھاڑے ناشتے میں کھائیں کمال دیکھیں۔ جس طرح چند دن میں گرم مزاج والے نوجوان محسوس کریں گے کہ ان کے جسم کی حدت ٹھیک ہورہی ہے ۔حتیٰ کہ جریان جیسے مرض میں فائدہ مند ہے ۔ اسے خام حالت میں یا ابال کر کھایا جاتا ہے ۔ سنگھاڑے تاثیر میں ٹھںڈے ہوتے ہیں تو معدے کی گرمی دور کرنے کے لیے فائدہ مند ثابتے ہوتے ہیں، جبکہ انہیں کھانے سے پیاس زیادہ محسوس ہوتی ہے۔

جس سے جسم میں پانی کی کمی کودور کرنے میں مدد ملتی ہے۔یہ صحت مند طرز زندگی کے لیے بہترین غذا ہے جس میں غذائی اجزاءکی مقدار زیادہ جبکہ کیلوریز لگ بھگ نہ ہونے کے برابر ہے، آدھا کپ سنگھاڑوں میں محض 0.1 فیٹ ہوتا ہے۔جسم سے زہریلے مواد کے اخراج کے باعث یہ یرقان کے مریضوں کے لیے بہترین سوغات ہے، مریض اسے خام شکل میں کھائیں یا جوس کی صورت میں استعمال کریں، یہ جسم سے زہریلے مواد کے اخراج کے لیے بہترین ثابت ہوتا ہے۔سنگھاڑے پوٹاشیم سے بھرپور ہوتے ہیں، جس سے بلڈ پریشر کو کم کرنے میں مدد ملتی ہے اور ایسا ہونے سے امراض قلب کا خطرہ بھی کم ہوتا ہے، 5 سنگھاڑوں میں روزانہ درکار پوٹاشیم کی مقدار کا 5 فیصد حصہ موجود ہوتا ہے۔

سنگھاڑے کا جوس پینا دل متلانے کی کیفیت کو دور کرتا ہے یا یوں کہہ لیں متلی کی شکایت ختم ہوتی ہے۔اس میں موجود وٹامن بی سکس اچھی نیند کے حصول میں مدد دیتا ہے اور بے خوابی کی شکایت دور کرتا ہے، اس کے علاوہ یہ وٹامن مزاج پر بھی خوشگوار اثرات مرتب کرتا ہے۔چونکہ اس میں پوٹاشیم، وٹامن بی اور ای جیسے اجزاءموجود ہیں جو کہ صحت مند بالوں کے لیے ضروری سمجھے جاتے ہیں، یہی وجہ ہے کہ سنگھاڑے کھانا بالوں کی نشوونما بہتر کرنے میں مدد دے سکتے ہیں۔سنگھاڑے کا سفوف کھانسی سے ریلیف کے لیے موثر ثابت ہوتا ہے، سنگھاڑے کو پیس کر سفوف بنالیں اور پانی کے ساتھ دن میں دوبار استعمال کریں، یہ کھانسی سے فوری ریلیف دینے والا ٹوٹکا ثابت ہوگا۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.

beylikdüzü escort bahçeşehir escort